page contents

Cheapest Countries To Visit Travel And Tourism

Cheapest Countries To Visit Travel And Tourism
87 Views

Cheapest Countries to visit Travel and Tourism

Cheapest Countries to visit Travel and Tourism

بین اقوامی سطح پر سیاحت کے حوالے سے دنیا کے سستے ترین ممالک کون کون سے ہے

دنیا کے سستے ترین ممالک  کی سیر

Cheapest Countries to visit Travel and Tourism

ناظرین اکثر پاکستانی لوگ اپنے ملک کی کرنسی کو دوسرے ملک کی کرنسی سے تبدیل کرواتے ہے تو  ان کو اس وقت پاکستانی کرنسی زوال پذیر معلوم ہوتی ہے  وہ اس لیے کہ ان کو اس وقت بہت زیادہ ماکستانی کرنسی کے مقابلے دوسرے ملک کی تھوڑی سی کرنسی ملتی ہے  لیکن کیا آپ جانتے ہے کہ دنیا کے کئی ممالک ایسے بھی ہے  جہاں پاکستانی پیسے کی قدر بہت زیادہ بڑ جاتی ہے اور ان ممالک کی کرنسی کمزور دیکھائی دیتی ہے  جب کہ یہ کوئی عام ممالک بھی نہیں ہے بلکہ سیاحت کے حوالے سے ان کا شمار دنیا کے بہترین ممالک میں ہوتا ہے  تو ناظرین ہم ایسے ہی دس ممالک کا ذکر کرے گے جن کو کرنسی پاکستانی کرنسی کے مقابلے میں بہت کمزور ہے اور یہاں پاکستانی لوگ سیر و تفریخ بڑے آرام سے کر سکتے ہے 

 

ایران

سب سے پہلے نمبر پر ہے ایران  اس کی کرنسی پاکستانی کرنسی کے  مقابلے میں بہت کمزور ہے  ایک  پاکستانی روپے کے بدلے میں تین سو ننانوے ریال حاصل کیے جا سکتے ہے  اور اسی وجہ سے پاکستانی سیاح ایران میں دل کھول کر خرچ کر سکتے ہے  ایران میں سیاحوں کے دیکھنے کے لیے مقامات کاشان کے تاریخی گھر   تبریز کا بازار  اسفہان کا نقشہ اور ایک قدیم شہر یزد ہے   ایران کی یہ کرنسی ایران کے علاوہ سیریا کے کچھ حصوں افغانستان کے کچھ علاقوں میں استعمال کی جاتی ہے  اور وقت کے لحاظ سے ایران پاکستان سے تیس منٹ پیچھے ہے  ایران میں لاکھوں کی تعداد میں شعیہ برادری ہر سال پاکستان سے جاتی ہے  ایران کا ویزا آپکو دو یا تین دن میں مل جائے گا جس کی فیس سات ہزار کے قریب ہے  جس میں آپ ایک ماہ تک ایران میں جا کر قیام کر سکتے ہے  فارسی اس ملک کی قومی اور سرکاری زبان کا درجہ رکھتی ہے  ایران میں آٹھ ہزار دوسو اقسام کے درخت اور بے شمار قسم کے پھول پائے جاتے ہے  ایران میں دنیا کا دس فیصد قدرتی تیل پایا جاتا ہے ایران دینا کے سب سے زیادہ گیس کے ذخائر رکھنے والا دوسرا بڑا ملک ہے    ناظرین جس طرح پاکستان میں قدرتی جھیلیں ہے اسی طرح ایران میں بھی بہت پیاری قدرتی جھیلں ہے ان کے نام مندرجہ دیل ہے

عرمیاں جھیل

انازلی  جھیل

ماہارلوں  جھیل

ہاممن جھیل

انڈونیشیا

انڈونیشیا کی کرنسی بھی پاکستانی کرنسی سے کمزور ہےاور اس بات کاانداذہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ پاکستانی ایک روپیاں انڈونیشیا  کے ایک سو انتیس روپے کے برابر ہے  اس ملک میں سیاحت کے حوالے سے دیکھینے والی چیزوں میں  ٹوبا جھیل ٹن جھن پٹنگ نامی نیشنل پارک ٹوراج لینڈ  سمندر میں گلی جزایر نتہائی مقبول ہے 

کولمبیا

پاکستان کا ایک روپہ کولمبیا کے پچیس روپے کے برابر ہے  لہذا پاکستانی اس ملک میں بھی خود کو امیر تصور کر سکتے ہے   سیاحت کے حوالے سے کولمبیا کا علاقی کوپا پایان  ٹیرونا نیشنل پارک  اور دا کافی ٹرائی انیگل شامل ہے   اس ملک کا ایک تہائی حصہ ایمازون کے جنگلوں پر مشتمل ہے   کولمبیا میں ایک ایسی نہر بھی ہے جس کو دیکھ کا لگتا ہے کہ اس کے پانی کا رنگ سات رنگوں میں ہے  لیکن یہ ایک دھنک افیکٹ ہے جس کی وجہ سے اس کا پانی ایسا نظر آتا ہے  کولمبیا میں زیادہ تر لوگ بات کرنے اور ہاتھ ملانے کے دوران آنکھ میں آنکھ ملا کر دیکھنا پسند کرتے ہے  یہاں کے زیادہ تر لوگ ناچنا اور گانا پسند کرتے ہے 

منگولیا

منگولیا چین اور روس کے درمیان گرا ہو ا ایک زمین بند ملک ہے   رقبے کے لحاظ سے منگولیا کی آبادی بہت کم ہے

اس ملک کی کرنسی بھی پاکستانی کرنسی کے مقابلے میں کافی کمزور ہے   پاکستانی ایک روپہ منگولیا کے بیس روپے کے برابر ہے منگولیا کے باسی آج بھی اپنے آباؤ اجدا کے طریقے کے مطابق اپنی زندگی گزار رہے ہے   ان کا گزر بسر مویشیوں پر ہی ہے  اور یہ سیاحت کے حوالے سے ایک خوبصورت ملک ہے   بودگ خان نیشنل پارک  منگولیا میں موجود دنیا کا قدیم ترین پارک ہے  ملک کے شمال اور مشرقی حصوں پر بڑے بڑے پہاڑ ہے    اور جنوب میں صحرائے گوبی موجود ہے   یہ ایشیا کا سب سے بڑا صحرا ہے  منگولیا میں کافی تعداد میں قدرتی جھیلیں موجود ہے جو سولہ ہزار مربع کلو میٹر پر پھیلی ہوئی ہے 

جنوبی کوریا

جنوبی کوریا کی کرنسی بھی پاکستانی کرنسی کے مقابلے میں بہت کمزور ہے   جنوبی کوریا کے گیارہ روپے پاکستانی ایک روپے کے برابر ہے   اور جنوبی کوریا بہت ہی عجیب و غریب ملک ہے  یہاں کے لوگ بہت وہم پرست ہے  یہاں پر نمبر چار کو بدقسمتی کی علامت سمجھا جاتا ہے  اور یہاں کے لوگ لال رنگ کی سیاہی استعمال نہیں کرتے  ان کا ماننا ہے کہ لال رنگ موت کی علامت  ہے  اس ملک کا کل رقبہ ایک لاکھ دوسو دس کلو میٹر ہے   جنوبی کوریا وہ ملک ہے جہاں دنیا کا تیز ترین انٹرنیٹ موجود ہے   شہد اور مکھن سے تیا ر کی جانے والی آلو کی چپس جنوبی کوریا کے لوگو ں کو بہت پسند ہے  اور یہ یہاں کی مشہور سوغات بھی ہے   سام سنگ کمپنی بھی جنوبی کوریا کی ہے جو دنیا بھر میں مشہور ہے  جنوبی کوریا کو پلاسٹک سرجری کا گھڑ بھی مانا جاتا ہے جہاں ہر سال لاکھو لوگ سرجری کے لیے آتے ہے   اگر آپ جنوبی کوریا میں سیر کے لئے جانا چاہتے ہے تو جےجو آلینڈ ضرور جائے   یہ آلینڈ اونچی چٹانوں اور ہرے برے درختوں کے قدرتی مناظر سے بھرا پڑا ہے   اور دیگر سیاحتی مقامات میں سیوراکاسان نیشل پارک  مونوموں بادشاہ کا زیر آب مقبرہ   شامل ہے 

چلی

چلی  میں بھی دیکھنے کے لیے بہت کچھ ہے لیکن اس کی کرنسی بھی پاکستانی کرنسی سے بہت کم ہے   یہاں کے چھ روپے پاکستانی ایک روپے کے برابر ہے    اس ملک کا مکمل نام جمہوریہ چلی ہے  یہ جنوبی امریکا کے جنوب میں واقعہ ہے  چلی پچیس اپریل اٹھارہ سو چوالیس کو آزاد ہو اتھا  چلی دنیا میں شراب بنانے اور پینے والے ممالک کی سف میں شمار کیا جاتا ہے  یہ دنیا کا پانچواں بڑا شراب بنانےوالا ملک ہے  چلی میں ایٹا کاما صحرا دنیا کا سب سے خشک صحرا مانا جاتا ہے  اس صحرا کے زیادہ تر حصے ایسے ہے جہاں پر کئی سالوں سے بارش کی ایک بوند تک نہیں برسی   ہے   چلی دنیا میں سب سے زیادہ بریڈ کھانے والا ملک ہے  سپین کے بعد چلی میں سب سے زیادہ لو گ کتابوں کو شوق سے پڑھتے ہے  چلی میں سطح سمندر سے اونچائی پر پائے جانے والی جھیلوں کی تعداد بہت زیادہ ہے  دنیا کا سب سے بڑا سوئمنگ پُل بھی چلی میں ہی موجود ہے   یہ پُل ایک ہزار گز لمبا اور بیس ایکڑ پر پھیلا ہوا ہے   اور اس کی گہرائی ایک سو پندرہ فٹ ہے   چلی میں بے شمار اقسام کے زہریلے سانپ بھی پائے جاتے ہے   چلی کے سیاحتی مقامات میں لیک دسٹرک چرچ  الکو یو ریلی اور لوسانیشنل پارک شامل ہے 

 

قازقستان

قازقستان رقبے کے لحاظ سے پاکستان سے ساڑھے تین گنا بڑا ہے  اور آبادی کے لحاظ سے یہ دنیا کے کم گنجان آبادی والے ممالک میں شمار ہوتا ہے   اس کی کل آبادی ایک کڑوڑ اسی لاکھ ہے   قازقستانی تین ٹینچ پاکستانی ایک روپے کے برابر ہے   قازقستان سولہ دسمبر انیس سو اکانوے کو عروس سے آزادی حاصل کی   قازقستان کے دارلحکومت کا نام آستانہ ہے   قازقستان مسلمانو ں کی زیادہ تعداد سنی افراد سے تعلق رکھتی ہے   قازقستان نے اڑتالیس ممالک کا ویزہ فری کر رکھا ہے اور ساتھ میں یہ کہا ہے کہ ہم غیر ملکی لوگو کو سیاحت کے لیے خوش آمدید کہتے ہے   ہر سال تقریبا تین لاکھ افراد قازقستان سیاحت کے لیے جاتے ہے   بلکش کی جھیل قازقستان کی سب سے بڑی صاف شفاف پانی والی جھیل ہے   اس کے علاوہ اور بھی بے شمار جھیلیں ہے لیکن یہ جھیل سیاحت کے لیے آنے والوں لوگو کی توجہ کا خاص مرکز ہے   قازقستان کے شہر الماتے میں بے شمار سیبوں کے باغات ہے برفانی چیتا آج بھی قازقستان کے برفانی علاقوں میں کثرت سے پایا جاتا ہے 

ہنگری

ہنگری میں بھی سیاحوں کے لئے بہت کچھ ہے  ہنگری کرنسی دو اعشاریہ پانچ سات  فورنٹ ایک پاکستانی روپے کے برابر ہے   ہنگری میں انسانی زندگی کے آثار چار ہزار قبل مسیح کے ملتے ہے   ہنگری کی قومیت لینا بہت ہی آسان ہے

قومیت حاصل کرنے کیلئے آپکوں صرف تین لاکھ مہادے پر دستک کرنے ہو گے  جس کے بعد آپکوں یہاں کی قومیت مل سکتی ہے  ہنگری کا کل رقبہ تقریبا ترانوے ہزار مربہ کلوں میٹر ہے یہاں کی آبادی ایک کڑوڑں کے قریب ہے ہنگری سن دو ہزار چار میں یورپ میں شامل ہوا یہاں پر ہنگیری زبان بولی جاتی ہے  یہاں پر سالانہ ایک کڑوڑ لوگ دنیا بھر سے سیر کرنے کو آتے ہے  یورپ کا سب سے بڑا تالاب بھی ہنگری میں ہی ہے یہاں کی ساٹھ فیصد آبادی شہروں میں ہی رہتی ہے   یہ دنیا کا تیسرا بڑا چرچ والا ملک ہے  یہا ں پانچ سو ایسی جگہ ہے جہاں زمین سے گرم پانی بکلتاں ہے   ہنگری میں مسلمانوں کی تعداد ظاہر نہیں کی جاتی ان کو ڈر ہے کہ کہیں یہ اپنی تعداد جان کر ہم پر غالب نہ آجائے کیونکہ وہاں کے مسلمانو ں کو ان کے حقوق ٹھیک طرح سے نہیں دئے جا رہے   لیک بالا ٹون یورپ کی دوسری بڑی جھیل جبکہ وسطی  یورپ کی سب سے بڑی جھیل مانی جاتی ہے  جو چھ سو ایک مربہ کلو میٹر رقبے پر پھیلی ہوئی ہے فٹبال ہنگری کی سب سے مقبو ل کھیل ہے 

Cheapest Countries to visit Travel and Tourism

besturdu