page contents

konish valley

konish valley
141 Views

konish valley

konish valley

حسین و جمیل وادی کونش

پاکستان میں فطرت اپنی تمام تر رعنائیوں اور خوبصورتیوں کے ساتھ جلوہ افروز ہے۔ اس بے پناہ قدرتی حسن کی وجہ سے پاکستان دنیا بھر کے سیاحوں کیلئے جنت کی حیثیت رکھتا ہے۔ اس کے تفریحی مقامات سوات، کالام، مالم جبہ، کاغان، ناران، شوگران، ایوبیہ، ٹھنڈیانی، مری، ہنزہ، کالاش اور آزاد کشمیر اپنی خوبیوں اور خوبصورتی کے لحاظ سے دنیا بھر میں شہرت کے حامل ہیں۔ یہاں کے خوبصورت مناظر دیکھنے والوں پر ایک سحر طاری کر دیتے ہیں۔ حالیہ برسوں میں جس جگہ نے سیاحوں کو اپنی جانب راغب کیا ہے وہ وادیٔ کونش یا کونش ویلی کہلاتی ہے۔ کونش ویلی پاکستان کی ایک خوبصورت ترین وادی ہے جو اپنے دلفریب اور دل موہ لینے والے مناظر، روح پرور آب و ہَوا، بلند و بالا فلک بوس سفید لباس اوڑھے کوہسار، دیدہ زیب اور دل کشا مرغزاروں، جنگلات، جاذبِ نظر آبشاروں، حد درجہ خوبصورت، پُراسرار اور طلسماتی نیلگوں جھیلوں کے باعث جنتِ اَرضی کا درجہ رکھتی ہے۔یہ وادی ظلع مانسہرہ کے شمال مغرب میں واقع ہے شاہراہ قراقرم یہاں سے گزرتی ہے یہ شاہرہ پاکستان اور چین کے درمیان تجارت کا اہم رول ادا کرتی ہے

وادی کونش کے مشرق میں درہ بھوگڑمنگ ہے مغرب میں وادی اگرواقع ہے شمال مغرب میں کوزہ بانڈہ کی بستیاں ہے خوبصورت وادی کونش کا مرکزی شہر یا ہیڈ کواٹر بٹل ہے بٹل کو ارد گرد کے خوبصورت پہاڑوں نے گیر رکھا ہے بٹل کے قریب اس وادی کا صحت افزا اور حسین مقام چھتر پلین آتا ہے
اس وادی میں موسم بہار کی آمد میں خوبصورتی کو چار چاند لگ جاتے ہے مختلف قسم کے بھول کھلنے سے محتلف رنگ نمایا ہونے لگ جاتے ہے یہاں کی سڑکیں بل کھاتی ہوئی قدرتی نظاروں سے لطف اندوز ہونے کا پورا موقہ دیتی ہے یہاں کے چشمے کا پانی صاف اور ٹھنڈا اور کو پوری تازگی عطا کرتا ہے بٹل سے صاف اور شفاف پانی کا ایک دریا گزرتا ہے وادی میں لوگو کی گزر بسر کا ذریعہ مویشی زراعت باغات اور جنگل ہیں

پاکستان کا شمار دنیا کے خوبصورت ممالک میں ہوتا ہے۔ اس کی خوبصورت وادیاں، خوبصورت مناظر، سرسبز و شاداب پہاڑ، بہتے دریا اور یہاں کا ثقافتی ورثہ اپنے اندر کئی خوبیاں اور خوبصورتی لئے ہوئے ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ دوسرے سیاحتی مقامات کی طرح وادیٔ کونش کو بھی دنیا بھر کے سیاحوں میں متعارف کرانے کیلئے کلیدی کردار ادا کرے۔ اس سے نہ صرف سیاحت کی دنیا میں اس علاقے کی اہمیت بڑھے گی بلکہ اس سے ملکی معیشت بھی ترقی کرے گی اور مقامی لوگوں کو روزگار کے بہتر مواقع بھی میسر آ سکیں گے۔

besturdu